پھٹی ایڑھیاں یا فنگس زدہ ناخن، جانیں پاؤں کو تکلیف میں مبتلا کرنے والی 3 مشکلات اور ان کا حل

خواتین میں ایڑھی

فہدنیوز! جسم کے کسی بھی حصے میں ہونے والا درد ہمارے لیے تکلیف کا باعث بنتا ہے۔ لیکن پاؤں میں کسی بھی قسم کا درد ہمیں چلنے پھرنے سے محروم کردیتا ہے۔ موسمِ سرما میں ایک مسئلہ جو عام ہے وہ ہے ایڑھیوں کا پھٹنا۔ پھٹی ایڑھیاں بے حد تکلیف دہ ہوتی ہیں جبکہ دکھنے میں بھی انتہائی بری لگتی ہیں۔

اس کے علاوہ بھی پاؤں کے کئی مسائل ہیں،آئیے بات کرتے ہیں کچھ عام سے مسائل اور ان کے حل کی۔پاؤں کو تکلیف میں مبتلا کرنے والی ایک بڑی مشکل ناخنوںکا گوشت کے اندر بڑھنا ہے۔ اس کے نتیجے میں انگلی میں سوجن ہوجاتی ہے اور یہ انتہائی تکلیف دہ ہوتا ہے۔ بعض اوقات اس کے باعث انگلی سے خون بھی نکل آتا ہے اور تکلیف شدید ہونے کی صورت میں انگلی انفیکشن کا شکار ہوجاتی ہے۔ لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ یہ مسئلہ کیوں پیدا ہوتا ہے؟ اس کی سب سے بڑی وجہ خراب طرح سے ناخن کاٹنا ہے اس کے علاوہ تنگ جوتے پہننے یا پاؤں میں پسینہ آنے سے بھی اس مشکل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ اس کے لئے ضروری ہے کہ انگلی کے ناخن کا خیال رکھا جائے

اور جیسے ہی یہ ایک حد سے بڑھ جائے اسے فوراً کاٹ دیا جائے۔ ناخن کو کبھی بھی بہت زیادہ اندر تک نہ کاٹیں۔\پاؤں کی ایڑھیاں پھٹنا بہت ہی عام مسئلہ ہے جو نہ صرف سردیوں بلکہ گرمیوں میں بھی پیش آسکتا ہے۔ایڑھیاں اس وقت پھٹتی ہیں جب ان کےٹشو خشک ہو جاتے ہیں۔ بڑھتی عمر کے ساتھ بھی یہ مسئلہ پیش آسکتا ہے۔ ماہرین طب کے مطابق پھٹی ایڑھیوں سے نجات پانے کے لیے ایسی کریم استعمال کریں جس میں یوریا شامل ہو۔ یوریا جسم کی چکنائی میں اضافہ کر کے اس کی خشکی اور الرجی کو کم کرتا ہے اور جلد کو ملائم بناتا ہے۔فنگس سے مراد پاؤں کے ناخنوں یا انگلیوں کا بدبودار، پیلا ہوجانا ہے۔ یہ انفیکشن کی ایک قسم ہے جو زیادہ تر کھلاڑیوں کے پاؤں میں ہوجاتی ہے

جس کی وجہ ہر وقت جاگرز یا شوز پہننا ہوتا ہے۔ آغاز میں انفیکشن اس طرح دکھائی دیتا ہے کہ جیسے ناخن کے اوپر ٹیلکم پاؤڈر چھڑکا گیا ہو۔ ایسی صورت میں ڈاکٹر کا تجویز کردہ اینٹی فنگل نیل وارنش استعمال کر کے اس سے چھٹکارہ پایا جاسکتا ہے۔ تاہم اگر یہ بڑھ جائے تو ڈاکٹر کی مدد سے ناخن میں ننھے ننھے سوراخ کر کے ان کے اندر ادویات کا چھڑکاؤ کیا جاتا ہے تاکہ وہ ناخن کے اندر کی جلد تک پہنچ سکی

اپنی رائے کا اظہار کریں