ہر صبح بھیگے چنے کھانے سے کیا ہو گا؟ بڑا سچ سامنے آ گیا ۔ کتنا ،

2

Connectedپاکستان ٹپس ! ہوتی ہے۔ ہر بیماری کے لیے الگ الگ دوائی دی جاتی ہے۔ اس کو اس طرح سے سمجھتے ہیں اگر آپ کو کھانسی ہے توالگ دوائی  گی۔ اگر زکام ہے تو الگ دوائی ملے گی۔ لیکن دونوں بیماریاں ایک ہی وجہ سے ہوتی ہیں۔ جسم میں کف بڑھنے سے۔ ایک اور مثال لے لیتے ہیں۔ اگر آپ کو سر درد ہے تو اس کے لیے الگ دوائی ملے گی ۔ اگر آپ کا بلڈ پریشر لو ہے تو اس کے لیے آپ کو الگ دوائی لینی پڑے گی ۔ لیکن سر درد کی

وجہ لو بلڈ پر یشر بھی ہو سکتا ہے۔ تو یہ دونوں بیماریاں آپس میں جڑی ہوئی ہیں لیکن آپ کو ڈاکٹر الگ الگ دوائی دے گا۔ اس بات کو ایک اور مثال سے سمجھتے ہیں ۔ اگر آپ کے جسم میں کہیں بھی درد ہے تو اس کے لیے آپ کو داکٹر ایک دوائی دے گا۔ یعنی کہ پین کلر یا اینٹی بائیٹک دے سکتا ہے۔ دوسرا اگر آپ کے پیٹ میں گیس بڑھی ہوئی ہے تو اس کے لیے گیس کے لیے الگ دوائی دی جائے گی ۔ اگر آپ کا ڈائجیشن خراب ہے تو آپ کو الگ دوائی دی جائے گی ۔ لیکن یہ تینوں بیماریاں ڈائجیشن کا خراب ہو نا ۔ پیٹ میں گیس بننا ۔ جسم میں درد ہو نا ۔ یہ تینوں بیماریاں ہماری اسیڈٹی بڑھنے کی وجہ سے ہوتی ہیں۔ یعنی ہمارے جسم میں گیس بڑھنے سے ہوتی ہیں ۔ تینوں بیماریاں ایک دوسرے سے تعلق رکھتی ہیں۔ اگر آپ ان کے تعلق کو ٹھیک کر لیں گے تو آپ کے پیٹ

میں گیس نہیں بنے گی۔ اور اگر آپ کے پیٹ میں گیس نہیں بنے گی تو آپ کے جسم میں درد نہیں ہو گا۔ لیکن ڈاکٹر پین کلر بھی دے گا۔ انٹی بائیٹک بھی دے گا۔ گیس کی دوائی بھی دے گا ۔ ڈائجیشن کے لیے الگ سے دوائی بھی دے گا۔ تو اس طرح سے آج کل پھسا یا جا رہا ہے۔ اسی طرح آ پ کے گھر میں بہت سی دوائیاں ہیں۔ صبح اٹھتے ہی دواؤں سے ہوتی ہے۔ صبح اٹھتے ہی خالی پیٹ شروعات کرنی چاہیےکسی اچھی چیز سے ۔ صبح اٹھ کر شروعات کرنی چاہیے آپ کو الا ئچی سے ۔ خالی پیٹ الا ئچی کھائیں۔ خالی پیٹ لانگ کھا ئیں۔ خالی پیٹ میتھی کا دانہ کھائیں ۔ خالی پیٹ بادام کھائیں۔ خالی پیٹ اخروٹ کھائیں۔ لیکن آج کل شروعات ہوتی ہے خالی پیٹ دوائی کھانے سے۔ کیونکہ ڈاکٹر کہتا ہے کہ خالی پیٹ دوائی کھاؤ۔ اتنی دوائیاں آج کل ہر گھر میں ہو گئی ہیں لیکن

میں آپ کو گارنٹی دیتا ہوں کہ آپ کی دوائیاں آپ کے گھر سے آپ کے ڈسٹ بن میں پہنچ جائیں گی۔ بس اس ویڈیو کو پورا دیکھ کر سمجھ کر باتوں پر عمل کرو۔ تو آپ کو کوئی بھی دوائی لینے کی ضرورت نہیں ہے۔ کیونکہ یہ ساری بیماری چھوٹی چھوٹی غلطیوں کی وجہ سے ہوتی

Leave a Comment