چقندر کا رس دماغ اور دل کو فائدہ پہنچاتا ہے

چقندر کا رس

برطانوی سائنسدانوں نے دریافت کیا ہے کہ لال چقندر کا رس خون کے بہاؤ اور دماغی صلاحیتوں کو بہتر بناتا ہے لیکن منہ میں موجود صحت بخش جراثیم اس کام میں سب سے زیادہ مدد کرتے ہیں۔ ایکسیٹر یونیورسٹی میں ماہرین کی ایک ٹیم نے 70 سے 80 سال کے تیس رضاکار کو تحقیق میں شریک کیا۔ دس دن گزرنے کے بعد معلوم ہوا کہ سرخ چقندر کا اصل اور خالص رس پینے والے بزرگوں میں رگوں کے اندر خون کا بہاؤ بہتر تھا جس کا دل کی صحت پر

بھی اچھا اثر پڑ رہا تھا۔ صرف یہی نہیں بلکہ اِن بزرگوں کی دماغی صحت بھی نمایاں طور پر بہتر رہی۔اسی تحقیق میں یہ بھی معلوم ہوا کہ منہ میں پائے جانے والے مفید جراثیم، چقندر میں وافر مقدار میں موجود غیر نامیاتی نائٹریٹ مرکبات کو نائٹرک ایسڈ میں تبدیل کرتے ہیں جو نہ صرف ہمارے دل کو فائدہ پہنچاتا ہے بلکہ دماغی صلاحیتوں کیلئے بھی بہت مفید ہے

Leave a Comment