جن کے 32 دانت ہوتے ہیں وہ بہت خوش قسمت ہوتے ہیں کیونکہ

جن کے

پاکستان ٹپس ! انسانی جسم کا ہر ایک حصہ خدا نے بہت سوچ سمجھ کر بنایا ہے، اگر ذرا سی چھوٹی سی ایک ہڈی بھی جسم کی ٹوٹ جائے یا کم ہو تو انسان شدید تکلیف میں مبتلا ہو جاتا ہے، مگر اس فیچرڈ سائنس نیوز میں ہم آپ کو آج بتا رہے ہیں لوگوں کے دانتوں سےمتعلق کچھ ایسی حقیقت جو ہیلتھ لائن فآر ٹوتھ اینڈ سائنس کے ماہرین نے بتائی ہے۔ ہماری ویب کے مطابق جس میں ان کا کہنا ہے کہ لوگوں کے 32 دانت کیوں ہوتے ہیں؟ اور کیا ہر کسی کے منہ میں

اتنے دانت ہوتے ہیں یا نہیں؟کچھ لوگوں کے منہ میں 32 دانت دراصل اس لئے ہوتے ہیں کیونکہ ان کے جسم میں کیلشیئم اور فلورک کیویٹیز زیادہ پائی جاتی ہیں اور یہ قدرتی طور پر پیدائش سے قبل ہی انسان کے مسھوڑوں میں بننے لگتا ہے جس سے بچے کا مسھوڑا اور جباڑہ تخلیق پاتا ہے۔32 دانت والے افراد کی خصوصیات:32 دانت والے افراد کو اکثر لوگ کہتے ہی ہیں کہ ارے آپ کے تو 32 دانت ہیں، آپ بہت تیز اور چالاک ہیں، یہ بات ماہرین بھی کہتے ہیں کیونکہ ان لوگوں کا امیون سسٹم بھی تیز ہوتا ہے اور دماغ کی چھٹی حس دوسروں کے مقابلے زیادہ اچھی ہوتی ہے۔ ان لوگوں کو خوش قمست اس لئے کہا جاتا ہے کیونکہ یہ لوگ جس چیز کی خواہش کرتے ہیں اس کے لیے اسباب بھی بنالیتے ہیں اور یوں ان کی کہی ہوئی بات پوری ہو جاتی ہے اور یہ خوش

قمستی سے آگے بڑھتے ہیں۔ ایسے لوگ طویل عمر پاتے ہیں، اور 65 سال کی عمر تک بالکل فعال نظر آتے ہیں، البتہ جسمانی بیماریوں کے باعث کمزور ہو جاتے ہیں، مگر یہ سائنس کہتی ہے کہ ایسے لوگوں کی عمر زیادہ ہوتی ہے۔

Leave a Comment