یہ پانچ سورتیں کوئی اس طرح سے پڑھ لے خاص کر شوگر

یہ پانچ

پاکستان ٹپس !سکون نہیں چاہتا کہ ساری زندگی اسے صحت وتندرستی والی زندگی میسر ہو ۔آج کچھ سورتوں کے خواص بتائے جارہے ہیں یقین جانئے یہ اعمال اور یہ سورتیں صحت و تندرستی کے حوالے سے نہایت اکسیر کا درجہ رکھتی ہیں ،نمبر ایک سورۃ السجدہ اس کا عمل کیا ہے کہ یہ سورت شفاء یابی کے بھی اثرات رکھتی ہے اس لئے اس سورت کو تین مرتبہ پڑھ کر پانی پر دم کر کے مریض کو پلانا مریض کی صحت یابی کی دلیل ہے اور اللہ اپنی

رحمت سے مریض کے صحت یاب ہونے کا ذریعہ بنا دے گا ،دوسری سورت ہے سورہ یٰسین عمل اس کا یہ ہے کہ اگر کوئی شخص ا س سورت کو بعد نماز فجر ایک مرتبہ روزانہ پڑھنے کا معمول بنا لے تو اسے ہر بیماری سے شفاء ملے گی لیکن اس میں یقین رکھنا ضروری شرط ہے ۔تیسری سورت سورۃ الحشر ہے اس کا عمل یہ ہے کہ سورۃ الحشر کی آخری تین آیتیں اسم اعظم شمار ہوتی ہیں جن میں مرض کی شفاء اور ضرورت کے پورا ہونے کے اثرات بہت تیز ہیں اس لئے یہ آیات جس مریض کے لئے بھی پڑھ جائیں گی اللہ کے فضل سے شفاء حاصل ہو گی ۔ چوتھی سورت ہے سورۃ الفیل اس کا عمل یہ ہے کہ جو شخص بھی بعد نماز عشاء تین سو تیرہ مرتبہ چالیس روز تک لگاتار پڑھتا رہے انشاء اللہ اسے بلڈ پریشر شوگر جیسی بیماریوں سے چھٹکارا مل جائے گا۔

اب آخری سورت ہے سورۃ القریش اس کا عمل یہ ہے کہ یہ سورت بیماری سے نجات کے لئے بہت مفید مانی جاتی ہے خاص کر موذی بیماریاں جیسے کے شوگر ہو گئی فالج ہے بواسیر کے لئے ا ن بیماریوں سے بچنے کے لئے آپ بعد نماز عشاء ایک سو گیارہ مرتبہ اس کو پڑھنے کا معمول بنا لیں انشاء اللہ جتنی بھی بیماریاں آپ کی ہوں گی شوگر فالج بواسیر یہ آہستہ آہستہ ٹھیک ہونا شروع ہوجائیں گی ۔حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا: میں نے اپنے رب ل سے سوال کیا تو اُس نے مجھ سے وعدہ فرمایا کہ میری اُمت سے ستر ہزار افراد جنت میں داخل فرمائے گا جن کے چہرے چودہویں رات کے چاند کی طرح چمکتے ہوں گے۔ میں نے زیادہ چاہا تو اس نے ہر ہزار کے ساتھ مزید ستر ہزار اضافہ فرمایا۔

میں نے عرض کیا: اے میرے رب! اگر وہ میری اُمت کے مہاجر (گناہوں کو ترک کرنے والوں سے پورے) نہ ہوئے؟ اﷲ تعالیٰ نے فرمایا: تب میں اُن کو تیرے لئے دیہات کے رہنے والوں میں سے مکمل کروں گا۔حضرت ابو اُمامہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ میں نے حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو فرماتے ہوئے سنا: میرے رب نے مجھ سے وعدہ فرمایا ہے کہ میری اُمت سے ستر ہزار افراد کو بغیر حساب و عذاب کے جنت میں داخل فرمائے گا۔ اُن میں سے ہر ہزار کے ساتھ ستر ہزار کو داخل کرے گا نیز اللہ تعالیٰ اپنے چلوؤں میں سے تین چلو (اپنی حسبِ شان جہنمیوں سے بھر کر) بھی جنت میں ڈالے گا۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو ۔آمین

Leave a Comment